صہیب اقبال
محمد نواز شریف زرعی یونیورسٹی ملتان کے طلباء کا کارنامہ  250 ایکڑ بنجر زمین کو قابل کاشت بنا دیا طلباء نے تحصیل جلالپور میں ایک سال کی محنت کے بعد بنجر زمین کو فصلیں اگانے کے لیے کارآمد بنایا قابل کاشت زمین پر گندم اور کپاس کے علاؤہ سبزیاں بھی اگائی جاسکتی ہیں.
محمد نواز شریف زرعی یونیورسٹی کے طلباء کا بہترین کارنامہ سامنے آگیا  250 ایکڑ بنجر زمین کو قابل کاشت بنا دیا طلباء نے تحصیل جلالپور میں ایک سال کی محنت کے بعد بنجر زمین کو فصلیں اگانے کے لیے کارآمد بنایا قابل کاشت زمین پر اب فصلوں کے ساتھ سبزیاں بھی اگائی جا سکتی ہیں.
یونیورسٹی کے ترجمان علی رضا نے پاک وائسز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ   شعبہ زرعی انجنئیرنگ کے  طلباء نے 250 ایکڑ رقبے کو قابل کاشت کے لیے صرف 22 لاکھ روپے خرچ کیے طلباء نے جدید طریقہ کار اختیار کرتے ہوئے کم خرچ پر زمین کو قابل کاشت بنا یا ہے  مزید 250 ایکڑ زمین کو قابل کاشت بنانے کے لیے بھی اقدامات شروع کردیے ہیں.
طالب علم مبشر نے پاک وائسز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ضلع ملتان میں بہت سارا رقبہ غیر آباد ہے اس حوالے سے ہم نے مل کر اپنے علاقے کی بنجر زمین کو قابل کاشت بنایا ہے اس کے لیے ہم نے جدید طریقہ اپباشی ، جدید مشینری اور مختلف کھادیں استعمال کی ہیں ۔ اب اس زمین پر کپاس گندم کے علاؤہ مختلف سبزیاں بھی کاشت کی جاسکتی ہیں جس سے زرعی شعبہ میں بہتری کا امکان ہے.
طالب علم عمران نے پاک وائسز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی آبادی مسلسل بڑھ رہی ہے اس کی غذائی ضروریات پوری کرنے کے لیے زیادہ قابل کاشت زمین کی ضرورت ہے اسی لیے ہم زرعی شعبہ انجینئرنگ کے طلباء نے یہ فیصلہ کرلیا ہے کہ اپنے علاقوں کی غیر آباد اور بنجر زمین کو قابل کاشت بنانا ہے اس لیے ہم نے ملتان کی تحصیل جلالپور پور میں بنجر زمین کو قابل کاشت بنادیا ہے۔ جس میں اساتذہ کی مکمل رہنمائی بھی شامل ہے.
زرعی ماہرین نے پاک وائسز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ  زرعی شعبہ کی ترقی کے لیے بنجر زمین کو قابل کاشت بنانا وقت کی اہم ضرورت ہے اس حوالے سے حکومتی سطح پر بھی حکمت عملی طے کرنے کی ضرورت ہے اگر حکومت اس معاملے پر توجہ دے تو ہم زرعی اجناس کی پیداوار بڑھا کر ملکی معیشت سنبھال سکتے ہیں

LEAVE A REPLY