ہانی رمضان 

آج ہم آپ کو پسنی کے ایک ایسے آرٹسٹ سے ملوا رہے ہیں جن کی مصوری دیکھنے کے لیے لوگ دور دور سے ان کے پاس جاتے ہیں۔  23 سالہ نوجوان صقر ناصر نے اپنی منفرد مصوری کی وجہ سے بہت جلد مقامی سطح پر پذیرائی حاصل کی ہے۔ ان کی تصاویر کی فیس بک اور انسٹاگرام پر بھی خوب چرچا ہے۔

ناصر نے اگرچہ کبھی مصوری کی باقاعدہ کلاس یا تربیت نہیں حاصل کی لیکن اس کے باوجود وہ کسی پروفیشنل آرٹسٹ سے کم نہیں ہیں۔

ناصر کو 2017 میں ادارہ ثقافت کے زیر اہتمام صوبائی سطح کے ایک مقابلے میں بہترین مصوری کا ایوارڈ  بھی جیتنے کا اعزاز حاصل ہے۔مقابلے میں صوبہ بهر سے مختلف اسکولوں ،کالجوں اور یونیورسٹیوں نے حصہ لیا تها لیکن پہلا انعام ناصر کے نام ہوا۔

 ناصر کو مکران اور اس کے ساحلی علاقوں کے دلکش نطاروں کو کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کرنے کا ہنر اچھی طرح سے آتا ہے۔مقابلے میں ایک ایسی بھی تصویر تھی جس میں مکران کے خوبصورت ترین پانچ مقامات کو ایک ہی فریم میں سموں دیا تھا جس کو لوگوں نے بہت پسند کیا۔

ناصر کا کہنا ہے کہ پسنی میں ٹینلٹ کی کمی نہیں لیکن نوجوانوں کے لیے مواقع نہ ہونے کے باعث ان کا ٹینلٹ کسی کام نہیں آرہا۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکومت کو زیادہ سے زیادہ آرٹ کے مقابلے کرانے چاہیے جس میں نوجوان اپنی تخلیقی صلاحیتوں کو شوکیس کر سکیں۔

رائیٹر کے بارے میں: ہانی رمضان پاک وائسز کے لیے پسنی سے بطور سٹیزن جرنلسٹ کام کرتیں ہیں۔ 

LEAVE A REPLY