جی آر جونیجو

تھرپارکر کے تحصیل ننگرپارکر جو پاکستان کے آخری سرحد والے تحصیل ھے جہاں کے علاقے مکینوں کو موسم سے باخبر کےلیئے محکمہ موسمیات کی جانب سے  کچھ سال پہلے ننگرپارکر کے پہاڑ کی گود میں آفیس بنائی گئی لیکن آفیس بننے سے ابھی تک غیر فعال بنی ھوئی ھے آفیس میں عملہ تعینات ھوئا یا نہیں یے بھی کسی کو معلوم نہیں ھے صرف ایک چوکیدار کبھی اتا ھے وہ بھی آفیس کو بند کرکے گھر بیٹھے تنخواہ لے رھا ھے۔

استعمال نہ ھونے اور سنبھال نہ ھونے کے باعث جدید ٹیکنالوجی کی مہنگی مشینیں، ڈش اور دیگر سامان خراب ھو رھا ھے۔
علاقے مکینوں کا کہنا ھے کہ حکومت نے عوامی پئسوں سے آفیس تو بنائی ھے لیکن اس سے عوام کو کوئی فائدہ نہیں مل رھا جب سے آفیس بنی ھے تب سے بند پڑی ھے کبھی بھی کوئی عملہ ایک چوکیدار کے سوا نہیں آیا ھے چوکیدار بھی آفیس کو کھاردار درخت
لگا کر  بند کر کے گھر بیٹھے تنخواہ لے رھا ھے۔
موسمیات کی آفیس غیرفعال ھونے کے باعث علاقے مکیں موسم احوال سے محروم ھیں   انہون نے مطالبہ کیا ھے کہ آفیس کو فعال بنایا جاۓ تاکہ علاقے مکیں موسمی احوال سے باخبر رھیں۔

LEAVE A REPLY