By GR Junejo
مٹھی: تھرپارکر کا ایک بڑا گاؤں کھیتلاری ھے جہاں کے باسیوں کی زندگی کا گذر سفر پورے تھر کی طرح مال  مویشی پر ھوتا ھے حکومت کی جانب سے اس گاؤں ميں مال مویشی کے علاج کی سہولیات میسر کرنے کے لیئے ایک وٹرنری سینٹر تو بنایا گیا  تاکہ اس گاؤں اور اس کے آس پاس کے رھنے والے ان سے فائدہ اٹھا سکیں مگر بدقسمتی سے محکمہ لائیوسٹاک و اینیمل ھسبنڈری کی عدم توجھ کے باعث عملہ تعینات ھونے کے باوجود بھی یے سینٹر بننے سے ابھی تک بند پڑا ھے اور مقرر عملہ گھر بیٹھے تنخواہ لے رھا ھے اور ادویات بھی۔جس کے باعث یہاں کے باسیوں کو اس سینٹر سے کوئی بھی فائدہ نہیں مل رھا ھے۔
اور آس پاس کوئی سینٹر نہ ھونے کے باعث باسی اپنی مویشی کا علاج کرانے سے کاسر ھیں اور ان کی مویشی مر جاتی ھے اس
وقت تھرپارکر میں جہاں قحط کی صورتحال ھے مویشیوں میں بیماریاں چل رھی ھیں اور سندھ حکومت نے تھر میں ایمرجنسی بنیادوں پر کام کرنے کا کہا ھے تو اس وقت تھر کے دیہات کے وٹرنری سینٹر بند پڑے ھیں۔
گاؤں باسیوں نے حکومت سے اپیل کرتے ھوئی کہا ھے کہ سینٹر کو فعال بنا کر ھمیں سہولیات دی جائیں تاکہ ھم اپنی بیمار مال مویشی کو بچا سکیں۔

LEAVE A REPLY