By Qadir Bakhsh Sanjrani

پنجگور تربت پرانا روڑ کے پل ٹوٹنے سے شہری عذاب میں مبتلا ہوگئے ہیں ایک سال سے یہ برج مرمت کے منتظر ہیں تاہم دو ماہ قبل ایکسئین بی اینڈآر نے ان دو پلوں کا جائزہ لیا لیکن تاحال ان کی مرمت اور بحالی کا کام شروع نہیں ہوسکا ہے.

علاقہ مکینوں جن میں سماجی کارکن فاروق داد، بشیراحمد شامل ہیں نے پاک وائسز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پرانہ تربت روڑ کے پل تین صوبائی وزرا اعلی تبدیل ہونے کے بعد بھی مرمت نہیں ہوسکے جس کی وجہ سے ٹریفک کی روانی متاثر اور شہری ازیت میں مبتلا ہوچکے ہیں اور مذید ان ٹوٹے ہوئے پلوں کی وجہ سے حادثات کا بھی شدید خطرہ ہے لیکن زمہ دار افراد اس جانب توجہ دینے سے قاصر ہیں ان کا کہنا تھا پرانا تربت روڑ پنجگور کا مصروف تریں شاہراہ ہے جو پنجگور کے مختلف شہروں کو ہیڈکوارٹر سے ملاتی ہے اس کے باوجود یہ اہم نوعیت کا مسلہ جوں کے توں ایک سال سے التوا کا شکار ہے جو لحمہ فکریہ ہے

پاک وائسز نے ایکسئین بی اینڈآر سے جب اس بابت رابطہ کیا تو ان کا کہنا تھا کہ سرکاری کام پی سی ون کے بغیر نہیں ہوتے اور میں نے خود جاکر ان دو ٹوٹے ہوئے پلوں کا جائزہ لیا اور انجنیئرز کو ہدایت کردی ہے کہ وہ پی سی ون تیار کریں تاکہ پلوں کی مرمت اور بحالی کا کام جلد سے جلد مکمل کیا جاسکے

LEAVE A REPLY