نذر عباس 

پاک وائسز، رحیم یار خان

رحیم یار خان کی میونسپل کیمٹیوں میں فری مویشی منڈیوں کا قیام عمل میں نہ لایا جا سکا جس کے باعث شہری ہفتہ وار مویشی منڈیوں میں ٹیکس دینے پر مجبور ہیں۔
عید قربان کو 9 دن رہ گئے مگر رحیم یار خان کی میونسپل کمیٹیوں میں فری مویشی منڈیوں کا قیام عمل میں نہیں لایا جا سکا جبکہ حکومت پنچاب نے اعلان کیا ہے کہ پنچاب بھر میں ہر ضلع کی سطح پر فری مویشی منڈیوں کا قیام عمل میں لایا جائے گا۔
 فری مویشی منڈیوں کا قیام نہ ہونے کی وجہ سے شہری ہفتہ وار مویشی منڈیوں سے جانور خریدنے پر مجبور ہیں۔ بڑے جانور پر 3 ہزار روپے اور چھوٹے جانور پر 7 سو روپے ٹیکس دینا پڑتا ہے۔ میونسپل کمیٹی ظاہر پیر کے چیئرمین میر نذیر ربنواز کا کہنا ہے کہ جلد فری مویشی منڈی کا قیام عمل میں لایا جائے گا تاکہ شہری ٹیکس فری جانور خرید سکیں۔
 انہوں نے مزید کہا کہ ابھی تک ہفتہ وار منڈیوں میں کانگو وائرس کی روک تھام کے لیے بھی کوئی حفاظتی انتظامات نہیں کیے گیے جس سے نہ صرف بیوپاری بلکہ شہری بھی پریشان ہیں۔ بیو پاری غلام یسن کا کہنا تھا کہ ہمیں ہفتہ وار منڈی میں جانوروں پر 7 سو سے لے کر 3 ہزار روپے تک ٹیکس دینا پڑتا ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ ” ایک تو جانور اتنے مہنگے ہیں اور اوپر سے ٹیکس نے رہی سہی کثر نکال دی ہے۔”
 “حکومت نے جو فری مویشی منڈی لگانے کا وعدہ کیا تھا وہ پورا کرے۔”
شہری محمد اکمل کا کہنا ہے کہ منڈیوں میں ضلعی انتظامیہ کی جانب سے لائیو سٹاک کا عملہ نمائشی طور پر موجود ہے مگر کانگو وائرس کے لیے کوئی حفاظتی سپرے نہیں کیے جا رہے جس سے کانگو وائرس پھیلنے کا بھی خطرہ ہے۔
رائیٹر کے بارے میں: نذر عباس پاک وائسز کے لیے رحیم یار خان سے بطور سٹیزن جرنلسٹ کام کرتے ہیں۔
تصاویر کریڈیٹ: نذر عباس

LEAVE A REPLY