نذر عباس

پاک وائسز، راجن پور

سفید رنگت گلابی کان اور منفرد چال ڈھال والے راجن پور کے نکرے بکرے کے شہنشاہوں جیسے نخرے۔ ناشتہ میں چنا بادام تو دوپہر کے کھانے میں دیسی گھی سے تواضع۔ جی ہاں یہ ہیں اسپیشل بکرے جن کی قیمت بھی اسپیشل ہے۔

عید الاضحیٰ سے ایک دن پہلے راجن پور کی مویشی منڈی بھی تیز ہو گئی ہے، نکرے بکرے کی قیمت دو لاکھ روپے تک جا پہنچی ہے۔

راجن پور کے سفید بکرے جن کا پورا جسم سفید ہوتا ہے اور کان گلابی انہیں عام زبان میں نکرے بکرا کہا جاتا ہے۔ راجن پور کے مشہور  یہ نکرے بکرے پاکستان کے ہر خطے میں فروخت کیے جاتے ہیں۔
عام طور پر یہ 70سے 80ہزار روپے کے حساب سے فروخت کیے جاتے ہیں لیکن عید قربان کے موقع پر ان کی ڈیمانڈ میں بہت اضافہ ہو جاتا ہے جس سے اس کی قیمت دو لاکھ روپے تک پہنچ جاتی ہے۔
 مویشی پال غلام فرید نے پاک وائسز کو بتایا کہ ان بکروں کی پرورش میں کافی خرچہ آتا ہے ان کو چنا بادام دیسی گھی جیسی خوراک دی جاتی ہے اور یہ اپنی رنگت اور چال کے لحاظ سے اپنی مثال آپ ہیں۔
“کراچی، لاہور اور فیصل آباد میں ان بکروں کی ڈیمانڈ بہت زیادہ ہے جہاں ان کی صحیح قیمت وصول ہو جاتی ہے۔”
 اس کے علاوہ راجن پور کی پہاڑی بکرے بھی بہت مشہور ہیں جن کے جسم پر لمبے لمبے بال ہوتے ہیں اور ان کی چال عام بکروں سے مختلف ہوتی ہے یہ بکرے بھی ملک کے دیگر شہروں میں فروخت کیے جاتے ہیں اور آج کل عید قربان کے موقع پر راجن پور کی مویشی منڈیوں میں ان بکروں کی فروخت سب سے زیادہ ہو رہی ہے۔

 

رائیٹر کے بارے میں: نذر عباس پاک وائسز کے ساتھ جنوبی پنجاب سے بطور سٹیزن جرنلسٹ کام کرتے ہیں۔

LEAVE A REPLY