By GR Junejo

تھر مین قحط سنگین صورتحال اختیار کر گیا ھے بچون اور جانوروں کی اموات کے بعد تھرپارکر کے فطری حسن طور پہچانے جانے والے حسین پرندے مور ایک بار پھر رانی کھیت کی بیماری میں مبتلا ہوکر موت کے منہ میں جارہے ہیں.

تھر پارکر کے مختلف علاقوں چیلہار ڈیپلو اور نواحی گاؤں میں مزید ستر مور ہلاک ہوگئے، اور مزید درجنوں مور رانی کھیت بیماری کا شکار ہیں۔ اور کتنے مور بینائی سے محروم پر شدید کرب سے دوچار ہیں۔ ان موروں کو بچانے کے لیئے علاقے کے لوگ اپنی مدد آپ کے تحت کام کر رہے ہیں۔ مٹھی میں محکمہ جنگلات کے حکام نے اب تک صورتحال کا نوٹس نہیں لیا ہے۔

 

رانی کھیت کی بیماری دیہات میں تیزی سے پھیل رہی ہے۔ حسین پرندوں میں تیزی سے جاری بیماری پر محکمہ وائلڈ لائف تھر پارکر نے کوئی اقدامات نہیں اٹھائے ھیں۔ تھر باسیوں کا کہنا ھے کے مور پرندہ تھر کی پہچان ھے جس کا ھم اولاد جیسا خیال رکھتے ھیں موروں کو بیمار دیکھ کر ھم پریشان رھتے ھیں ھم نے اپنی مدد آپ کے تحت ان کا علاج کیا ھے مگر ٹھیک نہین ھو رھے ھم نے محکمے کو شکایت بھی کی مگر ابھی تک انہوں نے کچھ نہیں کیا ھے۔

LEAVE A REPLY