الیاس رئیس

پنجگور ایک سرحدی علاقہ ہونے کی وجہ سے اس میں روزانہ ہزاروں کی تعداد میں گاڑیاں آتی جاتی ہیں ۔ پنجگور کا بازار بہت چھوٹا ہے اور بازار میں پارکنگ اور ٹریفک کا کوئی باقاعدہ نظام موجود نہیں ہیں ، جس کا جہاں جی چاہتا ہے اپنی گاڈی کھڑی کرلیتا ہے ، لوگوں نے آدھی سڑک تک اپنی دوکانیں سجا رکھی ہیں ۔ پنجگور بازار کہ ساتھ گرلز ہائی سیکنڈری اسکول چتکان اور پنجگور کا سب سے بڑا سرکاری ہسپتال بھی موجود ہے ۔

لڑکیوں کے اسکول گیٹ کہ ساتھ ہی گاڈیوں گیراج بھی موجود ہے ، اس وجہ اس جگہ بہت رش رہتی ہیں اور آئے دن حادثات ہوتے رہتے ہیں اور لڑکیوں کو سکول آنے اور جانے میں بہت مشکلات پیش آتی ہیں ۔

غلط پارکنگ کی وجہ سے یہی سڑک پر وقت جام رہتا ہے اس وجہ لوگوں کو ہسپتال جانے میں بھی بڑی مشکل پیش آتی ہیں۔

لوگوں نے حکومت وقت سے گزارش کی ہے کہ وہ تمام گیراج کو جو اسکول اور ہسپتال کہ آس پاس ہے نیو بازار میں شیفٹ کردے ۔ تاکہ طلباء اور عام عوام کو راحت مل سکے۔

LEAVE A REPLY