دھرمندر کمار بالاچ
ہر سال ہندوئوں کی بڑی تعداد رحیم یار خان کے اس میدان میں ہولی کا تہوار مناتی ہے۔گزشتہ سال کا ایک منظر۔ فائل فوٹو               
مقامی ہندوئوں کے مطابق حکومت نے چولستان کی ہندو کمیونٹی کو اس سال رحیم یار خان کی بستی امن گڑھ پیلس روڈ کے کھلے میدان میں ہولی کا تہوار منانے کی اجازت نہیں دی ہے۔
رحیم یار خان کی ضلعی انتظامیہ نے ملک میں سیکیورٹی کی صورتحال کو جواز بنا کر اس سال ہندو کمیونٹی کو کھلے میدان میں ہولی منانے کی اجازت دینے سے انکار کر دیا ہے۔ ہر سال ہندو روایتی جوش و جذبے کے ساتھ ایک دوسرے پر رنگ پھینک کر ہولی کا تہوار بستی امن گڑھ کے بڑے میدان میں مناتے رہے ہیں جہاں مسلم بھی شرکت کرتے رہے ہیں۔
ہولی کے موقع پر لوگ ایک دوسرے پر رنگ پھیکنے کے علاوہ روایتی رقص بھی کرتے ہیں۔ فائل فوٹو                     
رحیم یار خان میں ہندو کمیونٹی کے نمائندہ اور سماجی کارکن پریتم داس بالاچ نے پاک وائسز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہندوئوں کو ہولی کے موقع پر حکومت نے تحفظ فراہم کرنے سے صاف انکار کر دیا ہے۔
انہوں نے کہا: “ہمارا مندر پہلے ہی بند کر دیا گیا ہے اور اب ہم ہولی چولستان کی ویرانی میں تو منانے سے رہے۔” اس طرح
اپنے گھروں تک محدود ہندو برادری ہولی کا تہوار اس سال سادگی سے منائے گی۔
بستی امن گڑھ کا بھگت کبیر مندر سیکیورٹی نہ ہونے کی وجہ سے سال 2015 میں بند کر دیا گیا تھا۔                       
ادھر رحیم یار خان کی ضلعی انتظامیہ نے بہت سے مندروں کو پہلے ہی مناسب سیکیورٹی نہ ہونے کے باعث سیل کر دیا ہے۔انتظامیہ کے مطابق ہندو کمیونٹی مندروں کی سیکیورٹی کے انتظامات کرنے کی پابند ہے جس میں سیکیورٹی گارڈ، سی سی ٹی وی کیمرے، آٹھ فٹ اونچی دیوار اور بیریر شامل ہیں۔
 پریتم داس بالاچ نے مندورں کے بند کرنے کے بارے میں بتایا: “ہمارے پاس اتنے وسائل نہیں ہیں کہ مندروں کی سیکیورٹی کا
خود انتظام کر سکے۔” انہوں نے کہا کہ “یہ تو حکومت کی ذمہ داری ہونی چاہیے کہ وہ اقلیتوں کی عبادت گاہوں پر سیکیورٹی فراہم کرے۔”
پریتم داس بالاچ کے مطابق رحیم یار خان میں لگ بھگ درجن مندروں پر تالے پڑے ہیں۔                             
انہوں نے مزید کہا: “صرف رحیم یار خان میں لگ بھگ دس سے بارہ مندر سیکیورٹی کو بہانہ بنا کر بند کیے جا چکے ہیں جبکہ ہماری کمیونٹی کے اکثر لوگ گھروں میں ہی پوجا پاٹ کرنے پر مجبور ہیں۔”
بند کیے جانے والے مندروں میں بھگت کبیر مندر، راما پیر مندر، بابا سدا رام مندر اور دیگر شامل ہیں۔
رائیٹر کے بارے میں: دھرمندر کمار بالاچ پاک وائسز کے ساتھ بطور سٹیزن جرنلسٹ رحیم یار خان سے کام کر رہے ہیں۔ 
فوٹو کریڈیٹ:دھرمندر کمار بالاچ 
ایڈیٹنگ: حسن خان

LEAVE A REPLY