سہیل محمود بلوچ

گوادر اور قرب و جوار میں بارانِ رحمت کے نزول سے گوادر کے پیاسے عوام کے چہرے خوشی سے کھل اٹھےحالیہ بارشوں کے سلسلوں سے گوادر میں گزشتہ کئی دنوں سے بارشوں کا سلسلہ جاری ہے. گوادر جو کہ گزشتہ کئی سالوں سے قحط کا شکار تھا اور گوادر کا واحد ڈیم آنکاڑہ کور مکمل خشک ہو جانے کی وجہ سے گوادر میں واٹر ٹینکرز کے زریعے پانی کی فراہمی جاری تھی.
جو کہ سوا دو لاکھ کی آبادی کے لئے ناکافی تھے

بارانِ رحمت کے بعد آنکاڑہ ڈیم میں پانی جمع ہونے سے گوادر میں واٹر ٹینکرز سے فراہمی آب کا سلسلہ بند ہوچکا ہے. حالیہ بارشوں اور گزشتہ دن ہونے والے بارشوں کے بعد گوادر سٹی کا آنکاڑہ ڈیم پانی سے بھر چکا ہےمحکمہ پبلک ہیلتھ انجینئرنگ کے مطابق گوادر آنکاڑہ ڈیم 2010 کے بعد پہلی بار مکمل بھر چکا ہ. گوادر آنکاڑہ ڈیم میں اس وقت 18 فٹ پانی 11 ہزار ایکٹر پر محیط ہے جو کہ گوادر و قریبی علاقوں کو ایک سال سے زائد عرصہ تک پانی فراہم کر سکتا ہے

جبکہ ضلع گوادر کے تحصیل پسنی میں نو تعمیر شدہ سوڈ ڈیم اور شادی کور ڈیم دونوں میں میں پانی وافر مقدار میں آچکا ہے.
شادی کور ڈیم اور سوڈ ڈیم گوادر کے آنکاڑہ ڈیم سے کئی گنّا زیادہ بڑے ڈیم ہیں سوڈ ڈیم جسے گوادر کی پانی ضروریات کے لئے بنایا گیا ہے. اس وقت سوڈ ڈیم میں 45 فٹ سے زیادہ پانی آچکا ہے محکمہ آب رسانی گوادر کے زمہ داران کے مطابق گوادر کے آنکاڑہ ڈیم سے ایک سال سے زائد عرصہ تک گوادر شہر اور قرب و جوار کے علاقوں کو پانی فراہم کرینگے. اس کے بعد سوڈ ڈیم سے گوادر کو پانی فراہمی کا سلسلہ شروع ہوگا

سوڈ ڈیم سے گوادر تک پانی سپلائی کا پائپ لائن بچھانے کا کام جاری ہے. لیکن اب تک سپلائی لائن بچھانے کا کام مکمل نہیں ہو سکا ہے. گوادر سے سوڈ ڈیم تک پائپ لائن بچھانے کا کام ادارہ ترقیات گوادر ( جی ڈی اے ) کے پاس ہے اس کے علاوہ ڈیم میں بجلی کا نظام بھی اب تک موجود نہیں ہے لہذا حکومت وقت کو چاہیئے کہ کسی بحرانی کیفیت کے پیدا ہونے سے پہلے سوڈ ڈیم کے پائپ لائن بچھانے کا کام اور بجلی نظام کی فراہمی کو جلد مکمل کیا جائے. تاکہ گوادر کے عوام پیاسے نہ ہوں

LEAVE A REPLY