صہیب اقبال ، ملتان 

 ملتان کا ایک حلقہ ایسا بھی ہے جہاں تمام امیدوار کروڑ پتی ہے اور ان میں سب سے کم امیر پاکستان کے سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی ہے۔

این اے 158 میں سات امیدوار مدمقابل ہیں۔یہ ملتان شہر کا واحد حلقہ ہے جہاں سب امیدوار کروڑ پتی ہیں اور ان میں سب سے کم امیر سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی ہیں۔

سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی صرف 7 کروڑ 75 لاکھ 32 ہزار 162 روپے کے اثاثہ جات کے مالک نکلے۔ انہوں نے 5 کروڑ 44 لاکھ 15 ہزار 241 روپے مالیت کی پراپرٹی ظاہر کی جبکہ ان کے پاس ایک کروڑ 11 لاکھ 89 ہزار 621 روپے نقدی بھی ہے۔

پاکستان تحریک انصاف کے ابراہیم خان حلقے کے امیر ترین امیدوار ہیں جن کے اثاثوں کی مالیت 83 کروڑ روپے ہے جس میں ان کی بیرون ملک بھی جائیداد ہے۔

 حلقے سے آزاد امیدوار عمران شوکت 32 کروڑ روپے مالیت کے اثاثوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر امیر ترین امیدوار ہیں۔

حلقے سے مسلم لیگ ن کے امیدوار سید جاوید علی شاہ کے اثاثوں کی مالیت 30 کروڑ ہے جس میں زرعی اور کمرشل زمین شامل ہے۔یوں وہ حلقے میں اثاثوں کی مالیت کے اعتبار سے تیسری پوزیشن پر ہیں۔

پاکستان سرائیکی پارٹی کے امیدوار اللہ دتہ نواز کے کل اثاثہ جات کی مالیت 14 کروڑ 96 لاکھ ہے جن میں زرعی زمین اور گاڑیاں شامل ہیں۔

 آزاد امیدوار زین علی شاہ کے اثاثوں کی مالیت 13 کروڑ روپے ہے جن میں قیمتی فرنیچر اور زرعی اراضی شامل ہے۔

اسی حلقے سے جاوید ہاشمی نے بھی کاغذات نامزدگی جمع کروائے تھے جن کی مالیت 13 کروڑ تھی تاہم پارٹی سے ٹکٹ نہ ملنے پر کاغذات نامزدگی واپس لے لیے تھے۔

 پاکستان پیپلز پارٹی کے امیدوار سید یوسف رضا گیلانی ہیں جو اثاثوں کے اعتبار سے حلقے کے باقی امیدواروں سے سب سے کم امیر ہیں۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان کی ویب سائیٹ پر اثاثوں کی دی گئی تفصیلات کے مطابق سابق وزیر اعظم کے بنک اکاؤنٹ میں 31 لاکھ ایک ہزار 17 روپے کی رقم ظاہر کی گئی ہے۔  کاغذات نامزدگی میں یوسف رضا کی جانب سے 48 لاکھ کا فرنیچر اور دیگر گھریلو سامان ظاہر کیا گیا ہے، یوسف رضا 1 کروڑ 17 لاکھ روپے مالیت کی 89 کنال 16 مرلے زرعی اراضی کے بھی مالک نکلے۔

سابق وزیر اعظم نے گھر کی مالیت 63 لاکھ روپے ظاہر کی، 2015 میں 63 لاکھ 90 ہزار , 2016 میں 98 لاکھ جبکہ 2017 میں 1 کروڑ 55 لاکھ روپے زرعی آمدن ظاہر کی۔ یوسف رضا گیلانی نے 2015 میں 8 لاکھ 67 ہزار , 2016 میں 14 لاکھ 35 ہزار 500 جبکہ 2017 میں 22 لاکھ 90 ہزار 500 روپے زرعی ٹیکس ادا کیا۔ سابق وزیر اعظم نے بیٹی سمیت اپنے بچوں کے نام 355 ایکڑ اراضی بھی ظاہر کی۔

LEAVE A REPLY