By GR Junejo

مٹھی: مٹھی میں سندھ کی ثقافت کے رنگ بکھر گئے۔ مٹھی کے گورمینٹ ایلیمنٹری کالیج میں ایک روزہ فوڈ اور ثقافتی فیسٹیول منعقد کیا گیا جس میں مقامی لباسوں کے ساتھ مقامی کھانوں کو بھی خاص طور پر اجاگر کیا گیا

کالیج میں تھری سبزیوں اور کھانوں کا اسٹال لگایا تھی، ان سبزیوں میں اکثر بارش کے بعد ہونے والی سبزیاں تھی، جن کو تھری لوگ سکا کر پورا سال استعمال کرتے ہیں، اور وہ تمام سبزیاں لذیذ کہانوں میں شمار ہوتی ہیں۔سبزیوں اور کھانوں میں موٹھ، گوار، سنگری، ڈنئورا،کھاٹیو، مکھن ، چبھڑ، تل سے بنی دیسی خوراک، تھری منگوں کی دال، جھن لسی، گوار چپس، باجرہ روٹی، جوئر روٹی، کارونجھر کا شھد، دیسی گھی اور شیرو راجگرو شامل تھے۔ جو سارا توجھ کا مرکز رھے

مقامی ثقافت سے سجا لذت سے بھرپور اس فوڈ فیسٹیول میں کھانوں سے اٹھتی مہک سے اشتہا انگیز اور ذائقے دار فوڈ اور کلچرل فیسٹیول بھرپور انداز میں سارا دن جاری رہا- سندھی روایات، تہذیب و تمدن کے ساتھ تھر کے منفرد اور لذیذ پکوانوں(جس کو تھری کھچیا کہتے ھیں) کا آنے والوں نے بھی خوب لطف اٹھایا، مقامی لباس پہنے شاگردوں نے دھول کے تھاپ پر مقامی ڈانس کر کے مہمانوں کا استقبال کیا

اس فیسٹیول میں تھر کی مقامی ھاتھ کے ھنر سے بنی اشیاء بھی رکھی گئی تھی اس کے علاوہ اس فیسٹیول نین مقامی رسن و رواج کو فروخت دینے کے لیئے دولہا دلہن کی شادی کی بھی رسم منعقد کی گئی تھی جو بھی منفرد طور پر توجھ کا مرکز تھی۔

خوش ذائقہ کھانوں سے سجے رنگا رنگ فیسٹیول میں آنے والوں کا کہنا تھا کہ سندھ خاص طور پر تھر کا مقامی فوڈ ایک الگ سی پہنچان رکھتے ھیں جس کو لوگ بڑے شوق سے کھاتے ھیں ان کا کہنا تھا کہ تھر سندھ کی زندہ ثقافت کا مثال ھے

LEAVE A REPLY