By Qadir Baksh Sanjrani

بلوچستان کے سرحدی ضلع پنجگور میں بجلی کے بحران سے معمولات زندگی درھم برھم ہوکر رہ گیا ہے شہر بھر میں بمشکل شہریوں کو، ایک گھنٹہ بجلی میسر ہے جبکہ وولٹیج میں کمی کا مسلہ  شدید گمبیر ہے نہ پانی کے موٹر چلتے ہیں اور نہ بجلی سے منسلک کوئی اور کاروبار ہوتا ہے پنجگور کی پانچ لاکھ آبادی کیسکو کے ناروا رویے سے شدید مشکلات سے دوچار ہوگئی ہے جس پر شہری مجبور ہوکر سڑکوں پر نکل آئے.

سوردو سریکوران چتکان، عیسئی، تسپ، خدابادان، کلگ، گرمکان، وشبود، کاٹاگری کے مکینوں نے بجلی کے خودساختہ بحران پر ریلیاں نکال کر ڈپٹی کمشنر آفس کو جانے والی شاہراہ پر دھرنا دے کر شدید احتجاج کیا اور کہا کہ کیسکو پنجگور کے لوگوں کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کررہی ہے پنجگور شہر میں بجلی کا خودساختہ بحران پیدا کرکے لوگوں کے بنیادی حقوق سلب کیئے گئے ہیں شہر میں بجلی بحران کی وجہ سے نظام زندگی مفلوچ ہوکر رہ گیا ہے

لوگ پانی کے حصول میں سرگردان ہیں بجلی سے وابستہ کاروباری افراد نان شبینہ کے محتاج ہوکر رہ گئے ہیں ان کا کہنا تھا کہ جب بھی موسم سرما شروع ہوتی ہے پنجگور میں بجلی کا بحران پیدا کیا جاتا ہے اور پنجگور ملک کا واحد ضلع ہے جہاں لوگ آج بھی بجلی کے لیے ہر روز چیخ وپکار کرتی ہیں لیکن زمہ داروں کے کانوں میں جوں تک نہیں رینگتی انجمن تاجران کمیٹی کے صدر حاجی خلیل دہانی سماجی کارکن چاکر صدیق نے احتجاجی شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیسکو کو متنبہ کیا کہ وہ پنجگور کے عوام کے معاشی قتل عام بند کردے بجلی بحران سے، پورا نظام متاثر ہوا ہے اسپتال تعلیمی ادارے سرکاری دفاتر بھی شامل ہیں کیسکو پنجگور کے عوام سے کس بات کا بدلہ لے رہی ہے

بجلی کے ٹرانسفارمر کی مرمت کے اخراجات سے لیکر دیگر منٹینس کے تمام کام شہری خود اپنے خرچے سے کرتے ہیں پھر بھی کیسکو پنجگور پر ظلم ڈارہی ہے ان کا کہنا تھا کہ بجلی کے خود ساختہ بحران پر قابو نہیں پایا گیا تو شہر میں شٹرڈاوں ہڑتال کریں گے اس دوران کیسکو کے ایس ڈی، او نے احتجاجی شرکاء سے ڈپٹی کمشنر مسعود رند کے ہمراہ مزاکرات کیئے اور کہا کہ پنجگور میں بجلی کی طلب زیادہ ہے اور ہور لوڈنگ کی وجہ سے گریڈ باربار ٹرپ کرتا ہے تاہم ہماری کوشش ہے کہ مسلہ حل ہو اور شہریوں کی مشکلات دور ہوسکیں بعد، ازاں ڈپٹی کمشنر کی یقین دہانی پر شہریوں نے دھرنا ختم کردیا، اور پرامن طور پر منتشر ہوگئے

LEAVE A REPLY